Authors

Poetry Collection by Alishba Mirza

2 Lines Poetry

یہ آنکھیں کبھی درواز ہ پے تو کبھی آسمان پر دیکھ کر بھیگ جاتی ہے ان آنکھوں کو آج بھی تیرا انتظار ہے

 

جن کا ملنا مقدرو میں نہیں ہوتا
اُن کے پیچھے بھاگنا اچھا نہیں لگتا

 

 

 

 

خوبصورت شام اور تیری یاد تنہائی
اور تیرے ہاتھوں سے بَني  ھوئی چائے کی پیالی

 

تُجھے پانے کے لیے کیس حد تک چلے گئے ہم جو اپنے تھے اُن سے ہی بچھڑ گئے ہم

 

 

 

وہ میرا تھا یہ خیال اچھا تھا اگر وہ میل جاتا مُجھے یہ سوال اچھا

 

 

 

 

ایسے ہی بارش نہیں پسند مُجھے بارشوں کی بوندوں میں تیرا عکس نظر آتا ہے

 

 

 

شروع ہو رہی ہے دسمبر کی پہلی رات چلے اؤ پھر سے ہم سب اکھٹے ہو جائے آج کی رات
Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button

Adblock Detected

Please disable it to continue using this website.